lal khan on geo tv program alif

عالمی تنازعات کے محرکات، مذہبی یا سیاسی؟

’’عالمی تنازعات کے محرکات، مذہبی یا سیاسی‘‘ کے موضوع پر کامریڈ لال خان اظہار خیال کر رہے ہیں۔

students problems in pakistan

طلبہ کے مسائل

[تحریر: آصف لاشاری]  2008ء میں شروع ہونے والے سرمایہ دارانہ بحران کی قیمت پوری دنیا میں محنت کش طبقے اور عوام کو ادا کرنی پڑ رہی ہے۔ سرمایہ داری کے معیشت دان ابھی تک اس بحران سے نکلنے کا کوئی راستہ نہیں نکال سکے ہیں، شاید ایسا کوئی راستہ موجود ہی نہیں ہے۔ ترقی یافتہ […]

new provinces in pakistan

صوبوں کے نئے بٹوارے؟

[تحریر: لال خان] دھرنے کے خاتمے اور کینیڈا واپسی کے درمیانی وقفے میں مولوی طاہر القادری نے ایبٹ آباد میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے ’’ہزارہ‘‘ صوبہ بنانے کا وعدہ کر ڈالا ہے۔ اس صوبے کا مطالبہ پچھلے چند سالوں میں ابھرا ہے اور اس سلسلے میں کراچی سے اٹھنے والی سب سے بلند آواز […]

jamat e islami taliban cartoon

فتویٰ گردی

[تحریر: لال خان] سوات پر صوفی محمد اور مولوی فضل اللہ کی ’’تحریک نفاذ شریعت محمدی‘‘ کا قبضہ ’’سرکاری طور‘‘ پر تو شاید پانچ سال پہلے ختم ہو گیا تھا لیکن یہاں کی سماجی زندگی کو آج بھی اسلامی بنیاد پرستوں نے یرغمال بنا رکھا ہے۔ خاص کر مالاکنڈ میں ’’طالبان‘‘ کی ذمہ داریاں اب […]

jamaat e islami fascism in malakand

مالاکنڈ: تحریک انصاف کی سرپرستی میں جماعت اسلامی کی غنڈہ گردی

پختونخواہ میں تحریک انصاف کے ساتھ ’’نیا پاکستان‘‘ بنانے میں شریک جماعت اسلامی مالاکنڈ میں اپنے روایتی فسطائی ہتھکنڈوں پر اتر آئی ہے۔ انقلابی سوشلزم کا نعرہ لگانے والے پیپلز پارٹی کے نظریاتی کارکنان، ٹریڈ یونین رہنمائوں اور ترقی پسند نظریات رکھنے والے نوجوانوں کو دھمکایا جارہا ہے، مسجدوں میں کفر کے فتوے جاری کئے […]


Recent Articles

عالمی تنازعات کے محرکات، مذہبی یا سیاسی؟

’’عالمی تنازعات کے محرکات، مذہبی یا سیاسی‘‘ کے موضوع پر کامریڈ لال خان اظہار خیال کر رہے ہیں۔

read more

جامپور میں ایک روزہ مارکسی سکول

[رپورٹ: کلیم شاد] 26 اکتوبر بروز اتوار، جامپور میں ایک روزہ مارکسی سکول کا انعقاد کیا گیا۔ سکول کا موضوع ’’وادی سندھ کی قدیم تہذیب‘‘ تھا جس پر لیڈ آف کامریڈ ظفر نے دی۔ سیشن کی صدارت شہریار ذوق نے کی۔ ظفر نے اپنی لیڈ آف میں وادی سندھ کی تہذیب پر روشنی ڈالتے ہوئے […]

read more

کشمیر کی توہین

اداریہ جدوجہد:- اتوار 26 اکتوبر کو لندن میں کشمیر پر بھارتی قبضے کیخلاف ہونے والے ’’ملین مارچ‘‘ سے پیشتر ہندوستان کی انتہا پسند وزیر خارجہ سشما سوراج نے اس مارچ کو رکوانے کی بے پناہ سفارتی کوششیں کیں۔ ہندوستانی حکومت نے برطانوی حکومت کے اس مارچ کرنے کی اجازت دینے پر اعتراضات بھیجے اور اپنی […]

read more

طلبہ کے مسائل

[تحریر: آصف لاشاری]  2008ء میں شروع ہونے والے سرمایہ دارانہ بحران کی قیمت پوری دنیا میں محنت کش طبقے اور عوام کو ادا کرنی پڑ رہی ہے۔ سرمایہ داری کے معیشت دان ابھی تک اس بحران سے نکلنے کا کوئی راستہ نہیں نکال سکے ہیں، شاید ایسا کوئی راستہ موجود ہی نہیں ہے۔ ترقی یافتہ […]

read more

ٹیکسٹائل صنعت میں محنت کشوں کا شدید استحصال!

[تحریر: عمر رشید] پاکستان ٹیکسٹائل مصنوعات برآمدکرنے والا ایشیاء کا آٹھواں بڑا ملک ہے۔ چین اورانڈیا کے بعد دھاگہ بنانے والا تیسرا اور کپاس پیدا کرنیوالا چوتھا بڑا ملک ہے اور یہ صنعت ملکی مجموعی پیداوار میں 8.5 فیصد ہے‘ ہنر مند اور غیر ہنر مند مزدوروں کو روزگاردینے والی دوسری بڑی صنعت ہے 15 […]

read more

فیصل آباد میں ’’سٹوڈنٹس رائٹس فارم‘‘ کا اجلاس

[رپورٹ: PYA فیصل آباد] چنیوٹ بازار میں بروز جمعرات 3 بجے سٹوڈنٹس رائٹس فارم (SRF) کا تیسرا اجلاس ہوا جس میں زرعی یونیورسٹی، گورنمنٹ کالج یونیورسٹی، ٹیکنیکل کالج سمن آباد اور دیگر تعلیمی اداروں سے طلبہ نے شرکت کی۔ میٹنگ کا ایجنڈا ’’نوجوان اور انقلاب‘‘ تھا۔ بحث کا آغاز کامریڈ رضوان نے کیا اور طلبہ […]

read more

صوبوں کے نئے بٹوارے؟

[تحریر: لال خان] دھرنے کے خاتمے اور کینیڈا واپسی کے درمیانی وقفے میں مولوی طاہر القادری نے ایبٹ آباد میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے ’’ہزارہ‘‘ صوبہ بنانے کا وعدہ کر ڈالا ہے۔ اس صوبے کا مطالبہ پچھلے چند سالوں میں ابھرا ہے اور اس سلسلے میں کراچی سے اٹھنے والی سب سے بلند آواز […]

read more

دادومیں ایک روزہ مارکسی اسکول

[رپورٹ: کامریڈ ضیاء] 19 اکتوبر 2014ء کو دادو میں مارکسی اسکول کا انعقاد ہوا جس میں تین موضوعات زیر بحث آئے۔ پہلا سیشن عالمی و ملکی تناظر پر تھا جس کی صدارت حفیظ جمالی نے کی جب کہ لیڈ آف دیتے ہوئے رمیز مصرانی نے موجودہ عالمی و ملکی صورتحال پر تفصیل سے بات رکھی […]

read more

لڈوگ فیورباخ اور کلاسیکل جرمن فلسفے کا خاتمہ

مارکسی فلسفے (جدلیاتی مادیت) کے ارتقا پر تحریر کی گئی فریڈرک اینگلز کی شہرہ آفاق کتاب ’’لڈوگ فیورباخ اور کلاسیکل جرمن فلسفے کا خاتمہ‘‘ کا اردو ترجمہ اپنے قارئین کے لئے شائع کر رہے ہیں۔ یہ کتاب پہلی بار 1886ء میں شائع ہوئی تھی اور اینگلز کے مطابق 1846ء میں لکھی جانے والی ’’جرمن آئیڈیالوجی‘‘ […]

read more

فتویٰ گردی

[تحریر: لال خان] سوات پر صوفی محمد اور مولوی فضل اللہ کی ’’تحریک نفاذ شریعت محمدی‘‘ کا قبضہ ’’سرکاری طور‘‘ پر تو شاید پانچ سال پہلے ختم ہو گیا تھا لیکن یہاں کی سماجی زندگی کو آج بھی اسلامی بنیاد پرستوں نے یرغمال بنا رکھا ہے۔ خاص کر مالاکنڈ میں ’’طالبان‘‘ کی ذمہ داریاں اب […]

read more